ایٹم بم بنا لیتے ہو،وینٹی لیٹرکیوں نہیں بناتے ؟

اسلام آباد ( نیوز پلس) وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ نیوکلیئر ہتھیار بنانےوالے ملک کیلئے وینٹی لیٹر بنانا مشکل نہیں کورونانےہمیں سکھایانالج اکانومی کی طرف جاناہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ ہمیں اپنےپیروں پرکھڑاہوناہے،چیزیں خودبنانی ہیں, ، کورونا وائرس کی وجہ سے وینٹی لیٹرزبنانے کاخیال ہمیں اب آیا ہے، 22 کروڑ کی عوام والا ملک کیسے ہوسکتا ہے کہ امپورٹ کی طرف جائے۔

ہم نے لاک ڈاؤن لگادیا یہ نہیں سوچا کہ مزدور طبقے پر اس کا کیا اثر پڑےگا، کورونا امیر یا غریب میں فرق نہیں کرتا ان خیالات کا اظہار وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے کامسیٹ یونیورسٹی کے دورے کے موقع پر کیا ، وزیراعظم نے کہا کہ بدقسمتی ہمارے اندر خوداعتمادی نہیں آئی۔

وزیر اعظم عمران خان کہ ہم نے یہ سوچا ہی نہیں کہ ہم بھی پاکستان میں چیزیں بناسکتے ہیں، آج ہمارے صاحب اقتدار چاہیں بھی تو باہر جاکر علاج نہیں کرا سکتے ، اس سے پہلے تو سب کھانسی بھی ہوتی تھی توبیرون ملک جاکر علاج کراتےتھے۔

آج رولنگ ایلیٹ باہر علاج کرانے نہیں جاسکتی کیونکہ وہاں زیادہ خطرہ ہے۔، آج پاکستان میں سرکاری اسپتالوں کو بہتر بنانے کیلئے کام ہورہا ہے، ہمیں اپنے اسپتالوں کو درست اور بہتر بنانا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ جب تک منسٹرز پاکستان میں علاج نہ کرائیں تو یہ سرکاری اسپتال نہیں ٹھیک ہوسکتے، پیسے والے لوگ سرکاری اسپتال میں جانے کا سوچتے بھی نہیں ہے، ماضی میں حکمران طبقہ بیرون ملک جاکر علاج کراتا رہاہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ مودی اتنا ڈرپوک تھا کہ ایک دن پورا بھارت بند کردیا ملک کو ایک وژن کے تحت آگے لیکر جائیں گے ، طویل المدتی پالیسیوں کے ذریعے ہی ملک ترقی کرسکتا ہے