اسلام آباد: گندم کے بحران کی ذمہ داری سندھ حکومت پر عائد ہوتی ہے۔ وفاقی وزیر فخر امام

تفصیلات کے مطابق وفاوی وزیر برائے قومی غذائی تحفظ و تحقیق فخر امام کا پریس کانفرنس کے دوران کہنا تھا کہ دنیا میں گندم کی پیدوار میں پاکستان کانمبر 8واں ہے۔ رواں سال پبلک سیکٹر میں 6.6 ملین ٹن گندم کی خریداری کی گئی۔ پچھلے سال گندم کی پیداوار 40 لاکھ ٹن کی تھی، پچھلے سال 5 سے 6 لاکھ ٹن گندم کا بیک اپ میں تھا، پچھلےسال کی نسبت اس سال ہم نے 26 لاکھ ٹن زیادہ گندم خریدی۔

گندم کا بحران ، وفاق کا حکومت سندھ پہ الزام

فخر امام کا کہنا تھا کہ سندھ کے پاس پچھلے سال کی نسبت زیادہ گندم کا ذخیرہ ہے، سندھ حکومت کو ہم نے 2 خطوط لکھے تھے کہ فوری گندم ریلیز کرے۔

وفاقی وزیر فخر امام  نے کہا کہ گندم کا بحران پیدا ہوا اس کی ذمہ داری حکومت سندھ پر عائد ہوتی ہے، گندم کے کوٹے کے ریلیز کے لیے سندھ حکومت کو 2 مراسلے بھجوا چکے،سندھ حکومت سے ایک بار پھر درخواست ہے کہ گندم کا کوٹہ جاری کرے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پنجاب نے اپنے کوٹے سے زائد گندم کا اجرا کر دیا ہے،گندم کی قیمتوں کے تعین کی ذمہ داری صوبوں کی ہے۔