عامر لیاقت نے ایک بار پھر محاذ سنبھال لیا کہتے ہیں کہ

مجھے سمجھ نہیں آتی کہ مجھے کراچی میں کیوں استعمال نہیں کیا جاتا

یا کہیں بھی استعمال نہیں کیا جاتا۔

تفصیلات کے مطابق آج عامر لیاقت حسین نے وزیر اطلاعات کو اپنی ٹویٹ میں تنقید کرتے ہوئے کہا

کہ آج مجھے خوشی محسوس ہورہی ہے کہ میں نے فردوس عاشق اعوان کو ان فالو کیا تھا

بے ہنگم گفتگو، تسلسل سے مسلسل فضول الفاظ کی دھول

عمران خان کی ہدایات کے برعکس فردوسی بیانات کی یلغار، تنگ کرکے رکھا ہوا ہے پوری قوم کو۔

انھوں نے مزید یہ کہا کہ  پی ٹی وی میں سنگین بے قاعاعدگیوں کو تحفظ دینے کے سوا فردوس عاشق اعوان کوکیاآتاہے؟

آصف راڈو نے رمضان المبارک میں 50 روپے کا افطار باکس 250 میں دیا

انہیں بتایا گیا، خاور اظہر کی خلاف ضابطہ تقرری، امین اختر

اور عمیر معصوم کو ہیوی پیکج پر مارکیٹنگ سونپنا، محترمہ کو کچھ نظر نہیں آتا۔

عمران خان نے فردوس عاشق اعوان کی جانب سے جمعے کے روز تین منٹ تک

کشمیریوں کیلئے اٹھ کھڑے ہونے کے اعلان کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا

کہ عمران خان نے کہا کہ جمعے کے روز 12 سے ساڑھے 12 بجے تک

کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کرنا ہے

لیکن یہ فرماتی ہیں کہ جو جہاں موجود ہو وہ3 منٹ کے لیے 12 بجے کھڑا ہوجائے۔

عامر لیاقت نے کہا کہ بات کرنے کا کوئی طریقہ ہوتا ہے

اپیل اور حکم میں فرق ملحوظ خاطر رکھیں

قوم دل سے کشمیریوں کے ساتھ ہے حکم کی ضرورت نہیں ہے۔

جس کے بعد آج نجی ٹی وی سما کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے عامر لیاقت نے کہا کہ

مجھے سمجھ نہیں آئی کہ مجھے کراچی میں یا کہیں بھی استعمال کیوں نہیں کیا جاتا؟

کاش میں جان سکتا کہ مجھ سے ایسا کون سا قصور یا گناہ ہوگیا

کہ نہ مجھ سے قومی سطح پر کوئی بات کروائی جارہی ہے اورنہ مجھ سے کراچی کی سطح پر

میں درباری نہیں ہوں

عامر لیاقت نے مزید کہا کہ دراصل میں درباری نہیں ہوں۔خان صاحب نے مجھے یہی تعلیم دی ہے کہ جہاں غلطی ہو اس کی نشاندہی کرنی چاہیے

خان صاحب نے فرمایا کہ 12 بجے سے لے کر ساڑھے بارہ بجے تک اظہارِ یکجہتی کریں

فردوس عاشق اعوان کہتی ہیں کہ 12 بج کر تین منٹ پر کھڑے ہو جاؤ

اب بندہ 12 بج کر تین منٹ پرکیسے کھڑا ہو سکتا ہے۔

پتہ نہیں اگر کوئی بیت الخلاء میں بیٹھا ہو تو وہ کیسے ایک دم کھڑا ہو جائے گا 12 بج کر تین منٹ پر

ایک طریقہ ہوتا ہے ایک اپیل ہوتی ہے۔ یہ تو حکم دے رہی ہیں

میں بہت دور ہوں وزیر اعظم ہاؤس سے

ایک سوال کے جواب میں عامر لیاقت نے کہا کہ آج کل میرے کبوتر وزیر اعظم ہاؤس تک پہنچ نہیں پاتے

میں بہت دور ہوں وزیر اعظم ہاؤس سے۔بہت سی مشکلات آگئی ہیں کبوتر وزیر اعظم ہاؤس پیغام لے کر پہنچ ہی نہیں پاتے

تو میرے کبوتروں نے جانا چھوڑ دیا ہے سہم گئے ہیں بیچارے اب

مجھے دوسروں سے گلہ ہے لیکن عمران خان سے نہیں۔ عمران خان میری محبت ہیں میں انھیں نہیں چھوڑ سکتا۔

علی زیدی کے حوالے سے عامر لیاقت نے کہا کہ علی زیدی میئر کراچی بننا چاہتے ہیں